532

جموں وکشمیر میںسیاسی عمل بحال کیاجائے

اعتماد سازی کی بحالی کیلئے ریاستی درجے کی بحالی ناگزیر: بخاری
نیوزسروس

سرینگر:۴۱،اکتوبر:اپنی پارٹی صدر سید محمد الطاف بخاری نے خطہ میں بڑھتی غیر یقینی صورتحال پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے فوری ریاستی درجے کی بحالی اور جامع سیاسی عمل شروع کرنے پر زور دیا ہے جس سے جموں و کشمیر کے لوگوں میں اعتماد اور محبت کا جذبہ پیدا کر سکتا ہے۔پارٹی دفتر ایم ٹو چرچ لین سونہ وار سرینگر میں مختلف عوامی وفود سے تبادلہ خیال کرتے ہوئے بخاری نے کہاکہ فیصلہ سازی کے حق میں سے لوگوں کو محروم کرنا خطہ میں وسیع تر جمہوری مفادات کے لئے نقصان دہ ثابت ہوسکتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ جموں وکشمیر میں فوری سیاسی عمل کی ضرورت ہے جس کا مقصد ایسے حالات
پید ا کرنا ہے جہاں لوگ زندگی کے مختلف شعبہ جات بشمول شہری، سماجی، معاشی اور سیاسی سرگرمیوں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں، اپنے خیالات کا اظہار کرسکیں اور فیصلہ سازی عمل میں اُن کی شراکت داری ہو۔بخاری نے کہاکہ اپنی پارٹی نے اپنے قیام کے بعد روز ِ اول 8مارچ2020سے ہی جموں وکشمیر میں سیاسی جمود کو توڑنے کے لئے زبردست کوششیں کیں اور یہ جموں وکشمیر کے لوگوں کے وقار کے لئے لگاتار یہ عمل جاری رکھے گی۔انہوں نے کہا”ہم نے ہمیشہ جموں وکشمیر کے لوگوں کو مشکلات ومسائل کے بھنور سے باہر نکالنے کی کوشش کی اور اُن کی آواز کو مرکزی قیادت کے سامنے زور وشور کے ساتھ اُٹھایا، اگر چہ ہم اراضی اور نوکریوں کے حقوق بحال کرانے میں کامیاب رہے ہیں مگرجموں و کشمیر کے لوگوں میں سیاسی عدم استحکام کے احساس کو دور کرنے کے لیے ریاست کی بحالی ضروری ہے“۔اپنی پارٹی صدر نے کہاکہ جموں وکشمیر کے لوگ منتخب حکومت کی عدم موجودگی میں بہت زیادہ متاثر ہورہے ہیں اور لیفٹیننٹ گورنر قیادت والی انتظامیہ اور لوگوں کے درمیان وسیع خلاءہے اور ہر گذرتے دن کے ساتھ عام آدمی اور انتظامیہ کے درمیان کے دوری بڑھتی ہی جارہی ہے۔ لوگوں کے مسائل پر توجہ نہیں دی جارہی اور اکثر وبیشتر آمرانہ قوانین نافذ کئے جارہے ہیں جوکہ عوامی مفادات کے خلاف ہیں۔ اس طرح کی صورتحال ہمارے ملک کے جمہوری اقدار کے لئے انتہائی نقصان دہ ہے جسے دور کرنے کی ضرورت ہے۔اپنی پارٹی صدر نے مرکزی قیادت پر زور دیاکہ وہ عوام کے خواہشات کو تسلیم کرے اور جموں وکشمیر میں دیرینہ سیاسی عمل بحال کرنے کے لئے اقدامات اُٹھائے جائیں۔ انہوں نے کہاکہ صرف منتخب حکومت ہی لوگوں میں احساس تحفظ پید ا کرسکتی ہے اور وہ انتظامیہ کو عوام کے سامنے جوابدہ بھی بناسکتی ہے۔ بخاری نے کہاکہ جموں وکشمیر کے لوگوں کے بھی وہی حقوق ہیں جوملک کے دیگر شہریوں کے بھی ہیں، عوامی حکومت لوگوں کا حق ہے جوکہ اُنہیں آئین نے دیا ہے، مرکزی قیادت کو چاہئے کہ بلاتاخیر جموں وکشمیر میں سیاسی عمل شروع کیاجائے تاکہ موجودہ بیروکریسی نظام کی جگہ جمہوری منتخب حکومت لے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں