اسلامک یونیورسٹی میں

ہوسٹلوں کو خالی کیا گیا
طلبا کو گھر جانے کی صلاح
یو پی آئی

سرینگر :۴، اگست //اسلامک یونیورسٹی اونتی پورہ کے ہوسٹلوں کو خالی کیا گیا گیا ہے اور طلبا کو فی الحا ل گھر جانے کی صلاح دی گئی ۔ معلوم ہوا ہے کہ شہر سرینگر کے کئی تعلیمی اداروں میں سیکورٹی فورسز کو رکھا گیا ہے ۔ خبر رساں ایجنسی یو پی آئی کے مطابق افواہوں کے بیچ اسلامک یونیورسٹی اونتی پورہ میں ہوسٹلوں کو خالی کیا گیاہے۔ ہوسٹلوں میں مقیم طلبا کو فی الحال گھر جانے کی صلاح دی گئی ہے جبکہ امتحانات کو بھی موخر کیا گیا ہے۔ ہوسٹل انچارج امین بٹ نے اس بات کی تصدیق کی کہ موجودہ حالات کے پیش نظر یونیورسٹی کے ہوسٹلوں کو خالی کیا گیا ہے جبکہ آج منعقد ہونے والے امتحانات کو بھی ملتوی کیا گیا ہے۔ اسلامک یونیورسٹی میں زیر تعلیم ایک طالب علم متوقی نائیک نے بتایا کہ اُنہیں فوری طورپر ہوسٹل خالی کرنے کے ضمن میں آگاہ کیا گیا جس کے بعد سامان باندھ کو گھروں کی اور لوٹنے پر مجبور ہو گئے۔ ادھر شہر سرینگر میں اضافی اہلکاروں کی موجودگی اور اُنہیں رہائشی سہولیات فراہم کرنے کے سلسلے میں اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ کئی سرکاری عمارتوں میں بی ایس ایف ، پیرا ملٹری فورسز کو رکھا گیا ہے جس کے نتیجے میں لوگ خوف ودہشت کا شکار ہو گئے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ مرکزی حکومت کی جانب سے ممکنہ طورپر کسی بڑے فیصلے کے پیش نظر اس طرح کا اقدام اُٹھا گیا ہے۔ادھر ذرائع کا کہنا ہے کہ وادی کے اطراف و اکناف میں اضافی پیر املٹری فورسز کو پہنچا دیا گیا ہے اور کسی بھی صورتحال سے نمٹنے کی خاطر سیکورٹی ایجنسیوں کو بھی ہائی الرٹ پر رکھا گیا ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ انٹیلی جنس بیورو نے پہلے ہی الرٹ جاری کیا ہے کہ عسکریت پسند سیکورٹی فورسز کو نشانہ بنانے کی فراق میں ہے جس کو مد نظر رکھتے ہوئے پوری وادی میں ریڈ الرٹ جاری کرکے اضافی اہلکاروں کو تعینات کیا گیا ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ مرکزی حکومت ریاست میں حالات کو معمول پر لانے کی خاطر کئی سطحوں پر اقدامات اُٹھا رہی ہے جبکہ موجودہ صورتحال اس بات کی عکاسی ہے کہ کچھ بڑا ہونے والا ہے تاہم ابھی تک حکومت کی جانب سے اس بارے میں کچھ بھی نہیں کہا جا رہا ہے جس کے نتیجے میں لوگ تذبذب کا شکار ہو گئے ہیں۔ قابلِ ذکر ہے کہ ریاستی حکومت نے واضح کیا ہے کہ حکومت کو کوئی فیصلہ نہیں لیا بلکہ عسکریت پسندوں کی جانب سے حملوں کے خدشات کے پیش نظر اضافی اہلکاروں کی تعیناتی کا فیصلہ لیا گیا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *