افواہوں اورقیاس آرائیوں سے وادی میں ہیجانی کیفیت

شہروقصبہ جات میں تیسرے روز بھی پیٹرول پمپوں ، اے ٹی ایم بوتھوں اوردکانات کے باہر لوگوں کی قطاریں
نیوزسروس

سرینگر :۴، اگست //وادی میں تیسرے روز بھی پیٹرول پمپوں ، اے ٹیم ایم بوتھوں اور بازاروں میں گہما گہمی دیکھنے کو ملی ۔ اس دوران اکثر پیٹرول پمپوں کو بند کیا گیا ہے کیونکہ لوگوں نے کئی سولیٹر پیٹرول گھروں میں ذخیرہ کر لیا جس کے باعث قلت پیدا ہو گئی ہے۔ حکام کی جانب سے لوگوں سے اپیل کی جاتی ہیں کہ وہ پیٹرول کو ذخیرہ نہ کریں کیونکہ وادی میں وافر مقدار میں پیٹرول اور دوسری چیزیں دستیاب ہیں۔ وادی میں تیسرے روز بھی پیٹرول پمپوں ، اے ٹی ایموں پر لوگوں کا بھاری رش دیکھنے کوملا۔ شہر سرینگر کے ساتھ ساتھ دوسرے اضلاع میں بھی اکثر پیٹرول پمپ بند پڑتے ہوئے تھے تاہم جو پیٹرول پمپ کھلے تھے وہاں لوگوں کی اتنی بھیڑ تھی کہ وہ ایک دوسرے کے ساتھ ہی اُلجھ پڑے۔ ایم اے روڑ پر قائم پیٹرول پمپ پر تو تل دھرنے کی بھی جگہ نہیں اور لوگ پیٹرول کی خاطر کئی گھنٹوں تک اپنی باری کا انتظار کرتے رہے ۔ ریاض احمد نامی ایک شہری نے بتایا کہ پوری وادی میں ہیجانی کیفیت ہے پیٹرول پمپوں پر تیل دستیاب ہی نہیں جس کے نتیجے میں وادی کشمیر کی شاہراﺅں پر گاڑیوں کی آواجاہی پر بھی منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں۔ مذکورہ شہری کے مطابق مسافر بردار گاڑیاں بھی شاہراﺅ(باقی ۶ پر)
ں پر اب نظر نہیں آرہی ہے کیونکہ اکثر پیٹرول پمپ بند کئے گئے ہیں حالانکہ پیٹرول اُن کے پاس دستیاب ہے تاہم وہ پیٹرول فروخت کرنے کی پوزیشن میں نہیں ہے کیونکہ ایک ایک شخص 50سے 100لیٹر تک پیٹرول خرید رہا ہے۔ ادھراگرچہ حکومت نے کہاہے کہ لوگوں کو افواہوں پر کوئی دھیان نہیں دینا چاہئے کیونکہ وادی میں ایسی کوئی بات نہیں ہے، تاہم اس کے باوجود بھی لوگ پٹرول پمپوں کے باہر جمع ہورہے ہیں۔اتوار کو بھی پیٹرول پمپوں پر صبح سی ہی بھاری رش تھا۔لالچوک ، کرن نگر ، ٹنگہ پورہ ، ایچ ایم ٹی اور دیگر کئی جگہوں پر پیٹرول پمپ خالی تھے جبکہ کئی پیٹرول پمپوںکو بند کیا گیا تھا۔پٹرول پمپ ایسوسی ایشن کے ایک عہدیدار کا کہنا تھا کہ وادی میں پٹرول اور ڈیزل کی کوئی کمی نہیں ہے۔عہدیدار نے بتایا کہ ا±ن کے پاس2400 گاڑیاں موجود ہیں اور ا±ن کے پاس پانپور اور زیون میں 3ڈیپو بھی ہیں جہاں پر روزانہ پٹرول اور ڈیزل سے بھری گاڑیاں پہنچتی ہیں۔انہوں نے کہا کہ حیدرپورہ میں ایک پٹرول پمپ کی کھپت ایک دن میں 2ہزار لیٹر ہے لیکن وہاں 24گھنٹوں کے دوران 20ہزار لیٹر پٹرول ختم ہو گیا ہے۔ادھروادی میں موجود مختلف بنکوں کے اے ٹی ایمز پر بھی لوگوںکا بھاری رش دیکھا گیا اور کروڑوں روپے نکالے گئے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *