159

سرکاری چاول چوربازارمیں فروخت کرنے والے بے نقاب

فوڈکارپوریشن آف انڈیا بارہمولہ کاریکارڈضبط
کرائم برانچ کشمیرکی کارروائی ،ملزمان کیخلاف ہوگاجلدFIRدرج
نیوزسروس

سری نگر:۶۱،اپریل:سرکاری راشن ڈیپوﺅں کے ذریعے غریب اورمستحق صارفین میں تقسیم کئے جانے والے 630کوئنٹل چاول کی چوربازاری کے اسکینڈل کو طشت ازبام کرتے ہوئے فوڈکارپوریشن آف انڈیابارہمولہ یونٹ کیخلاف باضابطہ طورپرکیس درج کرنے کی کارروائی مکمل کرلی ہے ،اوربہت جلد اس اسکنڈل میں ملوث ایف سی آئی افسروں اورملازمین کیخلاف قانونی کارروائی شروع کی جائیگی جبکہ پہلے ہی متعلقہ اسسٹنٹ ڈائریکٹر کومعطل کردیاگیاہے ۔معلوم ہواکہ دسمبر2019میں ایف سی آئی کے ایک گودام واقع بارہمولہ سے چاول کی بوریوں سے لدی 7بڑی گاڑیوں یعنی مال بردارٹرکوں کی ایف سی آئی کے گودام واقع ہائیگام کیلئے کاغذات میں روانگی دکھائی گئی،(۶پر)
اوریہاں سے کاغذات میں دکھایاگیاکہ ان سبھی گاڑیوں کوڈی سرکل بارہمولہ بھیجاگیا،لیکن اس اسکنڈل کابھانڈااُسوقت پھوٹ گیاجب محکمہ خوراک وعوامی رسدات کے ٹی ایس بارہمولہ نے سری نگرمیں قائم محکمہ کے صوبائی ہیڈکوارٹر کے اکاﺅنٹس سیکشن کولکھاکہ سرکل ڈی بارہمولہ نے دسمبر2019میں چاول کی بوریوں سے بھری وہ 7گاڑیاں وصول نہیں کیں ،جن کاذکر ایف سی آئی کے بارہمولہ یونٹ نے اپنے ریکارڈمیں کیاہے ۔ذرائع نے بتایاکہ31دسمبر2019کوایف سی آئی بارہمولہ یعنی پیگ بارہمولہ سے ہائیگام روانہ کی جانے والی چاول سے لدی جن ٹرکوں کاذکرکیاگیا،دراصل وہ وہاں بھیجی ہی نہیں گئیں بلکہ یہ سب کچھ کاغذات میں دکھایاگیا،اوراس چوری کوچھپانے کیلئے ایف سی آئی کے افسروں اورملازمین نے بارہمولہ اورہائیگام سوپورمیں فرضی چالان بھی کاٹے ۔ذرائع کے مطابق لاکھوں روپے مالیت کے چاول کی چوربازاری کامعاملہ منکشف ہونے کے بعداسسٹنٹ ڈائریکٹر بارہمولہ کومعطل کردیاگیاجبکہ اس بات کی تحقیقات بھی شروع کی گئی کہ ماضی میں اونتی پورہ میں تعیناتی کے دوران بی پی ایل صارفین کیلئے مخصوص راشن کی چوربازاری کرنے کی پاداش میں معطل کئے گئے مذکورہ افسر کوبارہمولہ میں کس بناءپراہم ذمہ داری سونپی گئی جبکہ اُس کیخلاف اونتی پورہ میں کئے گئے اسکنڈل کے سلسلے میں پہلے ہی کرائم برانچ کشمیر نے ایک کیس درج کیاہے جوزیرتحقیقات ہے ۔ذرائع نے بتایاکہ ایف سی آئی بارہمولہ کے کچھ افسروں اورملازمین کی جانب سے تقریباً630کوئنٹل چاول سے بھری 7گاڑیوں کوغائب کئے جانے کامعاملہ کرائم برانچ کشمیرکی نوٹس میں لایاگیا،اورکرائم برانچ کی ایک ٹیم نے 8مارچ2020کوایف سی آئی بارہمولہ کے دفتر اورگودام میں چھاپہ ڈالا،اوریہاں ساراریکارڈضبط کیاگیا۔کرائم برانچ کشمیرکے ذرائع نے بتایاکہ چھاپے کے دوران ایف سی آئی بارہمولہ کے متعلقہ افسروں نے اس معاملے کوچھپانے کیلئے ہرطرح کی چال چلی اوروہ جھوٹ پرجھوٹ بولتے رہے ،لیکن یہاں موجودریکارڈ میں پایاگیاکہ ایف سی آئی گودام بارہمولہ اورہائیگام سوپورکے گودام سے چاول کی بوریوں سے بھری سات بڑی گاڑیوں کی روانگی اوروصولی نیز پھرانکی روانگی کے حوالے سے دونوں مقامات پرفرضی چالان کاٹے گئے ،اورچاول سے بھری سبھی سات ٹرکوں کوغائب کرکے مبینہ طورپرچوربازارمیں فروخت کیاگیا۔انہوں نے کہاکہ سات ٹرکوں میں لدے630کوئنٹل چاول کی بوریاں کی قیمت لاکھوں روپے بنتی ہے اوراس اعتبارسے ایف سی آئی بارہمولہ کے افسراورملازم لاکھوں روپے مالیت کے اسکنڈل میں ملوث ہیں ۔معلوم ہواکہ ایف سی آئی بارہمولہ میں چھاپہ مارکارروائی انجام دینے والی کرائم برانچ کی ٹیم نے اپنی مکمل رپورٹ اعلیٰ افسروں کوبھیج دی ہے اوربہت جلد ملوث افسروں اورملازمین کیخلاف ایف آئی آردرج کرکے اُن کی گرفتاری عمل میں لائی جائیگی اورقانونی کارروائی کوآگے بڑھایاجائیگا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں