233

سوپور حملے میں لشکرطیبہ ملوث

جرم کاارتکاب کرنے والوںکوجلد سزادی جائیگی:ڈی جی پی
کوروناکے باعث کارروائیوں میںکمی ، سیکورٹی فورسزکاپلڑابھاری
جے کے این ایس

سری نگر:۲۱،جون:جموں وکشمیرپولیس کے سربراہ دلباغ سنگھ نے سوپورحملے کیلئے لشکرطیبہ کوذمہ دار ٹھہراتے ہوئے کہاکہ حملے میں شامل جنگجوﺅں کی شناخت ہوگئی ہے اوربہت جلداُن کوکئے کی سزاملے گی ۔ سوپور جنگجوئیانہ حملے میں جاں بحق ہوئے 2پولیس اہلکاروں کے اعزازمیں منعقدہ تعزیتی تقریب کے موقعہ پرڈی جی پی دلباغ سنگھ نے کہاکہ سوپورحملے میں لشکرطبیہ ملوث ہے ،جس میں 2اہلکار اور2شہری ازجان ہوئے جبکہ تین دیگرافرادزخمی ہوئے ۔انہوں نے کہاکہ حملے میں شامل جنگجوﺅںکی شناخت کی گئی ہے تاہم ابھی اسبارے میں مزید تفصیلات ظاہرنہیں کی جائیں گی۔پولیس چیف کاکہناتھاکہ کورونا کرفیو کے پیش نظر سب انسپکٹر مکیش سنگھ کی
سربراہی میں پولیس کی ایک ٹیم کومین چوک سوپورمیں تعینات کیاگیاتھا،اوراسی ٹیم پرجنگجوﺅں نے اندھادھند گولیاں چلائیں ۔جموں وکشمیرپولیس کے سربراہ دلباغ سنگھ نے کہاکہ پولیس پارٹی نے جوابی کارروائی عمل میں لائی ،جس دوران کچھ سیکورٹی اہلکاراورشہری زخمی ہوگئے ۔انہوں نے کہاکہ زخمی ہونے والے شہری یہاں نزدیک ہی ریڈیاں لگاکرسبزیاں بیچ رہے تھے ۔انہوں نے کہاکہ زخمی ہونے والے 2پولیس اہلکار اور2عام شہری زخموںکی تاب نہ لاکردم توڑ بیٹھے ۔انہوںنے کہاکہ باقی زخمیوںکو بہترعلاج کیلئے سری نگرمنتقل کیاگیا ۔پولیس چیف نے بتایاکہ اس جنگجوئیانہ حملے کے ہرپہلو کاجائزہ لیاجارہاہے اورپولیس نے اس سلسلے میں تحقیقات شروع کردی ہے ۔دلباغ سنگھ کامزیدکہناتھاکہ جرم کاارتکاب کرنے والوںکوجلد انصاف کے دائر ے میں لاکراُنھیں کئے کی سزادی جائیگی ۔پولیس چیف نے کہاکہ جنگجومخالف کارروائیوں کے دوران ملی ٹنسی کافی کم ہوئی تھی اورسیکورٹی فورسزنے صورتحال کوکنٹرول کیاتھا تاہم کورونا لہر کے باعث ان کارروائیوں میں کمی آئی ۔انہوں نے کہاکہ اسکے باوجود سیکورٹی فورسزکاپلڑابھاری ہے ۔ڈی جی پی نے کہاکہ اب ایسے تمام علاقوں میں جنگجومخالف کارروائیوں میں تیزی لائی جائیگی ،جہاں جنگجوﺅں کی نقل وحرکت رہتی ہے ۔انہوں نے کہاکہ جنگجوئیانہ سرگرمیوں اورتشددکی وارداتوں میں جوکوئی بھی ملوث ہوگا،اُس کوکسی بھی صورت میں بخشانہیں جائیگا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں