324

عنقریب وادی کشمیرکو جنگجوﺅں سے پاک قراردیا جائے گا:آرمی چیف

دراندازی صفر تک پہنچ گئی ،مقامی بھرتی بھی کافی کم
پاکستان اور اس کے معاونین مایوس،فوج ہر چیلنج کا مقابلہ کرنے کےلئے تیار: جنرل نروانے
نیوز مانٹرینگ

سرینگر/۴۱،جون/بھارت پاکستان کے کسی بھی چیلنج کا مقابلہ کرنے کےلئے تیار ہیں اور اگر جارحیت کی گئی تو اس کا منہ توڑ جواب دیا جائے۔ کشمیر میں فوج کو فوج کو جو کامیابیاں مل رہی ہیں ۔اس سے پاکستان اور ان کے معاونین کو کشمیر میں مایوسی ہورہی ہے۔ نئی دہلی میںایک تقریب کے حاشیہ پر میڈیا نمائنددں کے سوالوں کے جواب دیتے ہوئے فوجی سربراہ لیفٹنٹ جنر ل منوج مکند نروانے نے کہا ہے کہ بھارتی فوج کے لئے کسی بھی جگہ کسی بھی طرح کوئی بھی کارروائی کرنا کوئی مشکل نہیں ہے۔ نروانے کہا کہ فوج وادی کشمیرمیں فوج کامیابی کے ساتھ آگے بڑھ رہی ہے اور بہت جلد وادی کشمیر جنگجوﺅں سے پاک قراردیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان اور اس کے معاونین جو کشمیر میں موجود
ہیں فوج کی کامیاب کارروائیوں سے بہت مایوس ہوچکے ہیں۔ فوجی سربراہ کا کہنا ہے کہ فوج صرف ایک آواز پر کارروائی کرنے کیلئے تیار ہے ۔ انہوں نے کہا کہ فوج ایک حکمت عملی کے تحت کام کررہی ہے اور ہماری پہلی کوشش یہ ہے کہ لائن آف کنٹرول پر کسی بھی طرح کی دراندازی پر قابو پانا ہے اور اس میں فوج بڑی حد تک کامیابی بھی ہوئی ہے۔ انہوںنے کہا کہ دراندازی صفر تک پہنچ گئی ہے کیوں کہ سرحدوں پر تعینات فوج مستعد اور چوکس ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ سرحدی پر ایسے آلات نصب کئے گئے ہیں جس سے دراندازی کی کوششیں ناکام بنائی جاتی ہے۔ نروانے نے کہا کہ نوجوانوں کی جانب سے بندوق ا±ٹھانے کے رجحان میں کافی کمی واقع ہوئی ہے۔ بندوق ا±ٹھانے کا مطلب موت کو گلے لگانے کے مترادف ہے۔ انہوںنے کشمیری نوجوانوں کے بارے میں کہاہے کہ کشمیری نوجوان کافی ذہین اور محنتی ہیں ان کو نہیں چاہئے کہ وہ کسی بہکاوے میں آکر ہتھیار یا پتھر ا±ٹھائیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں امید ہے کہ کشمیری نوجوان ریاست کی تعمیر و ترقی کےلئے اور امن کی فضاءقائم کرنے کےلئے مین سٹریم میں شامل ہوکر اپنا مستقبل سنواریں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں