248

مقامی جنگجوبندوق کاراستہ ترک کریں:فوج

نیوزسروس

سری نگر:۱۲، جون:فوج کی کلو فورسز کے کمانڈنگ آفیسرمیجر جنرل ایچ ایس ساہی نے سوموارکوکہاکہ مقامی اورغیرملکی جنگجوﺅں کے گٹھ جوڑ کوتوڑنااہم ترین ترجیح ہے ۔انہوں نے کشمیری عوام اورسیول سوسائٹی سے اپیل کی کہ وہ جنگجوﺅں کے نیٹ ورک کوتوڑنے میں سیکورٹی فورسزکیساتھ تعاون کریں ۔ پولیس کنٹرول روم سری نگرمیں ڈی جی پی دلباغ سنگھ اورآئی جی پی کشمیروجئے کمارکے ہمراہ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے فوج کی کلوفورس کے کمانڈنگ آفیسرمیجر جنرل ایچ ایس ساہی کاکہناتھاکہ فوج کی بنیادی توجہ اسبات پرمرکوز ہے کہ مقامی اورغیرملکی جنگجوﺅں کے مابین پائے جانے والے تال میل اورگٹھ جوڑ کوتوڑاجائے ۔انہوں نے کہاکہ دوسری اہم ترین ترجیح جنگجوگروپوںمیں مقامی
نوجوانوںکی شمولیت یاجنگجوﺅں کی بھرتی میں کمی لانا ہے ۔جنرل آفیسرکمانڈنگ کلو فورس کاکہناتھاکہ ہماری کوشش ہے کہ مقامی نوجوان جنگجو گروپوں میں شامل نہ ہوں ۔انہوںنے کہاکہ مقامی اورغیرملکی جنگجوﺅں کے گٹھ جوڑکوتوڑنے اورجنگجوگروپوں میں مقامی بھرتی پرقابو پانے کامقصد کشمیرمیں خون خرابے کی صورتحال اورواقعات پرروک لگانا ہے ۔جی اﺅسی ایچ ایس ساہی نے کشمیری عوام اورسیول سوسائٹی سے اپیل کی کہ وہ جنگجوﺅں کے نیٹ ورک کوتوڑنے میں سیکورٹی فورسزکیساتھ تعاون کریں ۔انہوں نے کہاکہ جنگجوﺅں کئے نیٹ ورک کوتوڑنے سے ہی تشدد کے سلسلے پرروک لگائی جاسکتی ہے ۔فوج کی کلو فورسز کے کمانڈنگ آفیسر ایچ ایس ساہی مقامی جنگجوﺅںکوتشدد اوربندوق کاراستہ ترک کرنے کامشورہ دیتے ہوئے کہاکہ میں مقامی جنگجوﺅں سے اپیل کرتاہوں کہ وہ بندوق کلچر کوچھوڑ کرقومی دھارے میں واپس لوٹ آئیں ۔تاہم انہوں نے ساتھ ہی کہاکہ اگرمقامی جنگجوتشددکاراستہ نہیں چھوڑیں گے تواُن کاحشر بھی وہی ہوگاجوگنڈبراٹھ جھڑپ میں مارے گئے جنگجوﺅں کاہوا ہے۔گنڈ براٹھ جھڑپ کے بارے میں کلوفورس کے جی اﺅسی کاکہناتھاکہ آبادی والے علاقوں میں جنگجو مخالف کارروائی عمل میں لانا ہمیشہ مشکل رہاہے ،تاہم گنڈ براٹھ میں موجود جنگجوﺅں کیخلاف آپریشن عمل میں لاتے وقت سیکورٹی فورسزنے کافی نظم وضبط اورصبروتحمل کامظاہرہ کیا ،اوریہی وجہ ہے کہ یہاں عام شہریوں کاکوئی نقصان نہیں ہوا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں