395

جموں وکشمیر بھارت کا اٹوٹ حصہ تھا ، ہے اور ہمیشہ رہے گا

مداخلت قابل قبول نہیں :جے شنکر
سرینگر /۳۲،ستمبر/ پاکستان پر سرحد پار ملی ٹنسی کو بند کرنے کی تاکید کرتے ہوئے وزیر خارجہ ایس جئے شنکر نے ایک مرتبہ پھر واضح کر دیا ہے کہ جموں کشمیر اور لداخ بھارت کے اٹوٹ انگ تھے اور ہمیشہ رہیں گے ۔ انہوںنے کہا کہ ”دہشت گردی “ایک عالمی لعنت ہے جس کا مقابلہ کیا جانا چاہیے اور دنیا کے ہر حصے میں شدت پسندوں کی محفوظ پناہ گاہوں کا خاتمہ ضروری ہے۔ سی این آئی مانیٹرنگ ڈیسک کے مطابق پاکستان کے وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری کے بھارت میں اقلیتوں اور اقوام متحدہ میں کشمیر کے معاملے پر کیے گئے بیان پر شدید ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے مرکزی وزیر خارجہ ایس جئے شنکر نے کہا کہ جموں و کشمیر اور لداخ کے پورے مرکز کے زیر انتظام علاقے ہندوستان کا اٹوٹ اور ناقابل تنسیخ حصہ تھے، ہیں اور رہیں گے اور اس پر کوئی بھی سمجھوتہ نہیں کیا جا سکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ آج بھی پاکستان سکھوں، ہندوو ں، عیسائیوں اور احمدیوں کے حقوق کی خلاف ورزیاں جاری رکھے ہوئے ہے اور پاکستان کو چاہئے کہ وہ اپنے جانب توجہ دیں جبکہ دوسرے ممالک کے مسائل میں مداخلت سے گریز کریں ۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر کا مسئلہ اٹھانے اور دفعہ 370 کی باتیں کرنے کے بجائے پاکستان کو چاہے کہ وہ ”سرحد پار دہشت گردی“کو روکنا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ ہم پاکستان سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ سرحد پار سے ہونے والی دہشت گردی کو روکے ۔ قابل ذکر ہے کہ نیویارک میں اقوام متحدہ کے ہیڈ کوارٹر میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کا اجلاس جاری ہے۔ پاکستان کی نمائندگی وزیر اعظم شہباز شریف کر رہے ہیں، بھارت کی نمائندگی ڈاکٹر جے شنکر کریں گے، جو سنیچروا ر کو بات کریں گے۔انہوں نے کہا کہ دہشت گردی ایک عالمی لعنت ہے جس کا مقابلہ کیا جانا چاہیے اور دنیا کے ہر حصے میں دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہوں کا خاتمہ ضروری ہے، ہندوستان اور آئی بی ایس اے گروپ کے دیگر اراکین نے بین الاقوامی پر جامع کنونشن کو تیزی سے اپنانے کے لیے مشترکہ کوششوں کو تیز کرنے کے اپنے عزم کا اعادہ کیا ہے۔ انہوں نے دہشت گردی کی اس کی تمام شکلوں اور مظاہر میں جہاں کہیں بھی اور جس کی طرف سے کی گئی مذمت کی۔ انہوں نے اس بات پر اتفاق کیا کہ دہشت گردی ایک عالمی لعنت ہے جس کا مقابلہ کیا جانا چاہیے اور دنیا کے ہر حصے میں دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہوں کو ختم کرنا چاہیے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں