632

محکمہ موسمیات نے کیاYellow-Atertجاری

30جنوری کو پیرپنجال کے آرپار بھاری برف باری
زمینی وفضائی ٹرانسپورٹ کی نقل وحمل اور بجلی سپلائی بھی متاثر ہوسکتی ہے:محکمہ موسمیات
نیوزسروس

سری نگر:۸۲، جنوری: گزشتہ کئی کچھ دنوں سے مطلع ابرآلودرہنے کے بیچ محکمہ موسمیات نے ہفتہ کے روز جموں و کشمیر میں 30 جنوری کوممکنہ طور پر بھاری برف باری ہونے سے متعلق ”پیلی وارننگ “جاری کی۔محکمہ موسمیات کے ایک اہلکار نےYellow-Atert پیلی وارننگ جاری کرتے ہوئے کہا کہ جموں و کشمیر میں آئندہ 24 گھنٹوں کے دوران کہیں کہیں ہلکی برفباری اور بارش ہونے کا امکان ہے۔ اگلے2 دنوں یعنی28اور29جنوری کیلئے موسمیاتی پیشیگوئی کرتے ہوئے محکمہ موسمیات نے کہا کہ جموں و کشمیر میں بکھرے ہوئے مقامات پر عام طور پرموسم ابر آلود رہنے کے بیچ ہلکی برفباری اور بارش ہوگی۔محکمہ موسمیات کے ایک ذمہ دار نے مزید کہاکہ 30جنوری کو جموں صوبہ کے خطہ پیرپنجال،ڈوڈہ،کشتواڑاورنواحی علاقوں کیساتھ ساتھ، وادی میںجنوبی کشمیر میں بھاری برف باری کے ساتھ ہی بکھرے ہوئے مقامات پر درمیانی درجے کی برف باری اور بارش ہونے کے75فیصدامکانات ہیں،جسکے نتیجے میں زمینی وفضائی ٹرانسپورٹ کی نقل وحمل اور بجلی سپلائی بھی متاثر ہوسکتی ہے۔ تاہم انہوں نے کہا کہ31جنوری کو بکھرے ہوئے مقامات پر ہلکی سے درمیانی برف وبارش ہوسکتی ہے۔محکمہ موسمیات نے کہاکہ 30جنوری کوممکنہ طور پر بھاری برف باری ہونے کے پیش نظر ارادہ کرنے والے مسافروں کو مشورہ دیا جاتا ہے کہ وہ متعلقہ ٹریفک پولیس سے سری نگر جموں قومی شاہراہ سمیت مختلف سڑک رابطوں کی حالت کی تصدیق کے بعدہی سفر کریں۔انہوںنے ساتھ ہی کہاکہ ممکنہ برف باری کی ہ مدت کے دوران برفانی تودے کے شکارہونے والے علاقوں میں برفانی تودے گرآنے کا اندیشہ لاحق رہے گا،اسلئے ایسے پُرخطر علاقوں کے لوگوںکومشورہ دیاجاتاہے کہ وہ ہنگامی نوعیت کی صورتحال کے بغیرعلاقوں سے باہر نہ نکلیں اور اپنی نقل وحمل کومحدود رکھیں ۔دریں اثناءجموں وکشمیر ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی نے جمعہ کوایک بیان میں وارننگ جاری کی کہ اگلے24 گھنٹوں کے دوران بانڈی پور، بارہمولہ، گاندربل میں 2500 میٹر سے اوپر کے علاقوں ومقامات پر درمیانی درجے کے برفانی تودے گرنے کا امکان ہے۔ JKDMAنے کہاکہ عام لوگوں کو مشورہ دیا جاتا ہے کہ وہ انتہائی احتیاط کے ساتھ صرف احتیاط سے منتخب کردہ محفوظ راستوں تک نقل و حرکت محدود رکھیں اور برفانی تودے کے راستے کے قریب غیر محفوظ بستیوں سے انخلا ءکریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں