453

2دن بعد 270کلومیٹر طویلسری نگرجموں قومی شاہراہ پریک طرفہ ٹریفک جزوی طور پر بحال

دوطرفہ ٹریفک شاہراہ کی حالت پر منحصر: ٹریفک پولیس
سری نگر لیہہ شاہراہ ،مغل روڑ اور کپوارہ،کرناہ سمیت کئی سڑکیں برف جمنے کے باعث ہنوز بند
نیوزسروس

سری نگر:۱۲، فروری:کشمیر کو باقی ملک سے ملانے والی 270کلومیٹر طویل سری نگرجموں قومی شاہراہ کو ضلع رام بن میں متعدد مٹی کے تودے گرنے کی وجہ سے گزشتہ2 دنوں بند رہنے کے بعد بدھ کی سہ پہر یک طرفہ ٹریفک کےلئے کھول دیا گیا۔ادھر سری نگر لیہہ شاہراہ ،مغل روڑ اور کپوارہ،کرناہ سڑک برف جمع اور جمنے کے باعث ہنوز بندہے۔ ٹریفک محکمہ کے حکام نے بتایا کہ سری نگرجموں قومی شاہراہ کو پیر کی صبح گاڑیوں کی آمدورفت کے لئے بند کر دیا گیا تھا، جب پہاڑیوں سے مٹی کے تودے اوربڑے پتھرگرآنے کا سلسلہ شروع ہوگیا اور شاہراہ پر مٹی کے ڈھیر اور پتھر جمع ہوئے۔حکام نے بتایا کہ دلواس، پیرہا، پیرہا ٹنل کے قریب، مہادکیفے ٹیریا، جیسوال پل، ترشول موڑ، سیری، ٹی2، بندر موڑ، ماں پاسی، گنگرو، ہنگنی ماروگ، کشتواڑی پاتھھر، میں آرٹیریل روڈ سے ملبہ ہٹانے کی کارروائیاں کی گئیں۔ شالگھری رامپاری، تبیلا اور چملواس میں مسلسل بارش اور برف باری کی وجہ سے سیلابی صورتحال پیدا ہوگئی۔انہوں نے بتایا کہ بدھ کی صبح موسم میں بہتری کے ساتھ، متعلقہ روڈ کلیئرنس ایجنسیوں نے مزید آدمیوں اور مشینوں کو متحرک کیا اور سہ پہر کو یک طرفہ ٹریفک کےلئے قومی شاہراہ کو جزوی طور پر کھولنے میں کامیاب ہو گئے، جس سے ناشی اور بانہال کے درمیان پھنسے ہوئے گاڑیوں کو کلیئر کرنے کا راستہ ہموار ہوا۔حکام نے بتایا کہ کلیئرنس آپریشن جاری ہے اور امکان ہے کہ بدھ کی رات تک سڑک کو دونوں راستوں کے لیے ٹریفک کے قابل بنا دیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ سڑک کی حالت کا تازہ جائزہ لینے کے بعد جمعرات کی صبح دونوں طرف سے تازہ ٹریفک کی اجازت دی جائے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں